تازہ ترین
سپین ۔ کاتالونیا کے صوبائی انتخابات آخری مراحل میں داخل         سپین۔کاتالونیا کے وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ کے سامنے فلسطین کے حق میں مظاہرہ         نارویجن کرکٹ فیڈریشن کےسینئر کوچ خالد محمود انتقال کرگئے         نواز شریف کو انصاف دلانے کیلئے دنیا بھر میں آواز بلند کرینگے، ملک نور اعوان         سپین۔ختم نبوت بل میں ترمیم ،فلسطین ، سانحہ ماڈل ٹاؤن اور آرمی پبلک سکول کے عنوان سے آل پارٹیز کانفرنس کا انعقاد         نیا پاکستان پینل سپین کی جانب سے تبدیلی پینل فرانس کو جیت کی مبارک باد         حاجی اسد حسین کی صدارت میں مسلم لیگ ن سپین کا اہم اجلاس ، ملکی حالات پر بات چیت         مقبوضہ بیت المقدس قدیم ترین شہروں میں سے ایک         پی ٹی آئی سپین کا پہلا باقاعدہ اجلاس 10 دسمبر کو ہو گا ، ممبران بھر پور شرکت کریں گے         بیلجیم کے ہزاروں بچوں کو روزانہ ڈپریشن کی گولیاں کھانے پر کس نے مجبور کیا ، آپ بھی جانیں         اے ٹی ایم کیش مشینیوں میں لاکھوں کے فراڈ کا انکشاف ، حقائق جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے         امریکی سپریم کورٹ بھی ٹرمپ کی حامی نکلی ، چھ مسلم ممالک کے داخلے پر پابندی کا حکم نامہ جاری         طاہر رفیع کو سیوتادانس پارٹی کی طرف سے کاتالونیا کی صوبائی اسمبلی کے انتخابات کے لئے انتخابی فہرست میں شامل ہونے پر دلی مبارک باد         الحاج چوہدری کرامت حسین مہر کے اعزاز میں عشائیہ کے شرکا کی تصاویر         راجہ شفیق کیانی ، جاوید مغل اور افضال احمد بیدار کی طرف سے دیئے گئے عشائیہ میں الحاج چوہدری کرامت حسین مہر کا محمد اقبال چوہدری ، چوہدری امتیاز آکیہ اور شفقت علی رضا کے ساتھ گروپ فوٹو        
l_292803_022456_updates

مردم شماری : وفاق اور سندھ حکومت کااختلاف سامنے آگیا

مردم شماری کے معاملے پر وفاق اور سندھ حکومت میں اختلاف سامنے آگیا ،ایڈووکیٹ جنرل سندھ نے پی پی کی درخواست کی حمایت جبکہ ڈپٹی اٹارنی جنرل نے اسے خلاف آئین قراردیدیا ۔

سندھ ہائی کورٹ میں پیپلز پارٹی کی مردم شماری کے طریقہ کار کے خلاف درخواست کی سماعت ہوئی ، جسٹس منیب اختر نے اس موقع پر شہری محمد اسحاق کی درخواست بھی منسلک کرنے کا حکم دیا ۔

دوران سماعت اے جی سندھ نے کہا کہ درخواست پر ہمیں کوئی اعتراض نہیں جبکہ ڈپٹی اٹارنی جنرل نے کہا کہ درخواست قابل سماعت نہیں اسے مسترد کیا جائے۔

جسٹس منیب اختر نے ریمارکس دئیے کہ یہ بظاہر وفاق اور صوبے کا تنازع ہے، دو حکومت کے تنازع کو حل کرنے کا سپریم کورٹ کا دائرہ اختیار ہے۔

عدالت نے مزید دلائل طلب کرتے ہوئے درخواست کی سماعت7اپریل تک ملتوی کردی