تازہ ترین
یوم پاکستان مشاعرہ ، ایک شام فاخرہ انجم کے نام         پاک، اسپین اکنامک ڈپلومیسی، شفقت علی رضا         یوم پاکستان پروگرام کی کامیابی قونصل جنرل کی ان تھک محنت کا نتیجہ ہے ،امتیاز آکیہ         طاہر رفیع اور اجمل رشید بٹ ہسپانوی الیکشن میں امیدوار ہوں گے         Pakistan vs Australia 3rd ODI Live | 27 March 2019         Pakistan vs Australia 2nd ODI Live | 24 March 2019 | Ptv Sports Live         Thousands of Catalan separatists march in Madrid         یوم پاکستان اور ڈاکٹر محمد اسد کے عنوان سے اسپین کے تاریخی شہر غرناطہ میں پہلے پروگرام کا انعقاد         میکسیکو:حادثے میں 25 تارکین وطن ہلاک         برطانیہ میں امیگریشن اب پبلک کیلئے تشویش کابڑا موضوع نہیں رہا، سٹڈی میں انکشاف         17 سالہ جوڈی کے قتل کے شبہ میں دوسرا شخص گرفتار         ٹیپو سلطان کون تھا؟ مورخین اور ماہرین کی رائے         میکسیکو نائٹ کلب پر فائرنگ ،15 ہلاک         دُبئی: پاکستانی ڈرائیور نے چوری کرنے پر بھارتی ملازم کو پکڑوا دیا         موٹرولا کے Razr فولڈ ایبل فون کے فیچرز سامنے آ گئے        
1501517514dailyausaf

پاکستان انتہائی پسندیدہ ملک۔۔۔۔۔بھارتی وزیر نے چونکا دینے والا بیان دے ڈالا

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک ) بھارت نے کہا ہے کہ اس نے پاکستان کو دئیے گئے تجارت کیلئے انتہائی پسندیدہ ملک کے درجے پرنظرثانی کے حوالے سے تاحال کوئی فیصلہ نہیں کیا۔ بھارتی وزیرصنعت و تجارت نرمالا سیتھارامن نے لوک سبھا کے اجلاس میں ا یک سوال کے تحریری جواب میں کہاکہ پاکستان نے تاحال بھارت کو تجارت کیلئے انتہائی پسندیدہ ملک کا درجہ نہیں دیا اور اس نے 1209 اشیاء منفی فہرست میں شامل رکھی ہوئی ہیں جو بھارت سے درآمد نہیں کی جاسکتیں۔

انہوں نے کہاکہ بھارتی حکومت نے پاکستان کو دئیے گئے انتہائی پسندیدہ درجے پرنظرثانی کے حوالے سے تاحال کوئی فیصلہ نہیں کیا۔ انہوں نے کہاکہ عالمی تجارتی تنظیم کے قواعد و ضوابط کے تحت تنظیم کے ہر رکن ملک کو دوسرے ملکوں کی طرف سے انتہائی پسندیدہ ملک کا درجہ دینا ضروری ہے، بھارت نے پہلے ہی پاکستان سمیت تمام رکن ملکوں کو یہ درجہ دیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ انتہائی پسندیدہ ملک کے تحت عالمی تجارتی تنظیم کاہر رکن ملک دوسرے تجارتی ملک کے ساتھ غیر امتیازی برتاؤ کا پابند ہے، پاکستان نے تاحال ہمیں یہ درجہ نہیں دیا اور اس نے صرف137 مصنوعات واہگہ اٹاری بارڈر کے ذریعے بھارت سے منگوانے کی اجازت دی ہوئی ہے۔ دونوں ملکوں کے درمیان2016-17ء میں تجارت کا حجم2.28 ارب ڈالر ہے۔