تازہ ترین
سپین ۔ کاتالونیا کے صوبائی انتخابات آخری مراحل میں داخل         سپین۔کاتالونیا کے وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ کے سامنے فلسطین کے حق میں مظاہرہ         نارویجن کرکٹ فیڈریشن کےسینئر کوچ خالد محمود انتقال کرگئے         نواز شریف کو انصاف دلانے کیلئے دنیا بھر میں آواز بلند کرینگے، ملک نور اعوان         سپین۔ختم نبوت بل میں ترمیم ،فلسطین ، سانحہ ماڈل ٹاؤن اور آرمی پبلک سکول کے عنوان سے آل پارٹیز کانفرنس کا انعقاد         نیا پاکستان پینل سپین کی جانب سے تبدیلی پینل فرانس کو جیت کی مبارک باد         حاجی اسد حسین کی صدارت میں مسلم لیگ ن سپین کا اہم اجلاس ، ملکی حالات پر بات چیت         مقبوضہ بیت المقدس قدیم ترین شہروں میں سے ایک         پی ٹی آئی سپین کا پہلا باقاعدہ اجلاس 10 دسمبر کو ہو گا ، ممبران بھر پور شرکت کریں گے         بیلجیم کے ہزاروں بچوں کو روزانہ ڈپریشن کی گولیاں کھانے پر کس نے مجبور کیا ، آپ بھی جانیں         اے ٹی ایم کیش مشینیوں میں لاکھوں کے فراڈ کا انکشاف ، حقائق جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے         امریکی سپریم کورٹ بھی ٹرمپ کی حامی نکلی ، چھ مسلم ممالک کے داخلے پر پابندی کا حکم نامہ جاری         طاہر رفیع کو سیوتادانس پارٹی کی طرف سے کاتالونیا کی صوبائی اسمبلی کے انتخابات کے لئے انتخابی فہرست میں شامل ہونے پر دلی مبارک باد         الحاج چوہدری کرامت حسین مہر کے اعزاز میں عشائیہ کے شرکا کی تصاویر         راجہ شفیق کیانی ، جاوید مغل اور افضال احمد بیدار کی طرف سے دیئے گئے عشائیہ میں الحاج چوہدری کرامت حسین مہر کا محمد اقبال چوہدری ، چوہدری امتیاز آکیہ اور شفقت علی رضا کے ساتھ گروپ فوٹو        
1501426911dailyausaf

پاکستان کی کمزورخارجہ پالیسی کی وجہ سے مسئلہ کشمیرسردخانے کی زینت بن گیا،چوہدری یاسین

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی سکیورٹی اداروں کی جارحیت’ انسانی حقوق کی پامالی’ عورتوں کی عصمت دری’ نوجوانوں کی جان بوجھ کر پیلٹ گن ے نشانہ بنا کر بینائی سے محروم کرنا روز کا معمول بن گیا ہے ایسے میں بین الاقوامی سطح پر پاکستان کی کمزور خارجہ پالیسی کی وجہ سے مسئلہ کشمیر سرد خانے کی زینت بن گیا ہے اور عالمی انسانی حقوق کی تنظیموں کا کردار سوالیہ نشان ہے۔ بھارت کے وزیراعظم مودی اور پاکستان کے سابق حکمرانوں کے اجتماعی مفادات کی بدولت کشمیری قوم ظلم کی چکی میں پس رہی ہے۔ یہ باتیں آزاد کشمیر کے سابق سینئر وزیر اور موجودہ اپوزیشن لیڈر چوہدری محمد یاسین نے مقامی ریسٹورنٹ میں ایک پریس کانفرنس کے موقع پر کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ بحیثیت کشمیری ہماری اولین ترین ترجیح ہے کہ سرحد کے اس پار کشمیریوں پر ہونے والے مظالم کے بارے بھرپورکردار ادا کریں میں نے اس مقصد کے لئے اپنی زندگی کو وقف کردیا ہے کشمیر کے بیٹے بریان مظفر وانی شہید کی قربانی ضرور رنگ لائے گی اس سے تحریک آزادی کشمیر میں مزید تیزی آئی ہے۔ 19 ستمبر کو سوئٹزر لینڈ کے شہر جنیوا میں اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے ہیڈ کوارٹر میں اجلاس منعقد ہورہا ہے ہم نے اس سلسلے میں ایک بھرپور مظاہرے کا پروگرام بنایا ہے اس مقصد کے لئے اس پریس کانفرنس کا انعقاد کیا ہے برطانیہ اور یورپ بھر کے محب الوطن کشمیریوں کو اس میں شرکت کرکے بھارتی سرکار کی مقبوضہ کشمیر میں وحشیانہ کارروائیوں اور جارحیت بارے عالم اقوام کو توجہ دلانا ہوگی۔ میں بھی اس سلسلے میں لوگوں کے پاس جا کر آگاہی دونگا اور میڈیا کی بھی ذمہ داری ہے کہ وہ اس سلسلے میں اپنا کردار ادا کرے کیونکہ اس وقت عالمی سطح پر اس بارے بھرپور آگاہی نہیں ہے ہمیں اس پر بہت زیادہ کام کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ پاکستان کی موجودہ سیاسی صورتحال بارے انہوں نے کہا پہلی دفعہ عدالت عظمیٰ نے آزادانہ اور غیر جانبدارانہ بغیر کسی دبائو کے طاقتور کو قانون کے مطابق سزا دی ہے جو کہ ایک خوش آئند بات ہے۔ میاں نواز شریف جو پچھلے 37 سالوں سے سیاست کے میدان مین اپنے حریفوں کے لئے کرتے آئے ہیں آج اسی کے جال میں پھنسے ہیں مسئلہ کشمیر کو پچھلے چار سالوں میں میاں نواز شریف نے بحیثیت وزیراعظم پس پشت ڈال دیا اس کی بنیادی وجہ بھارت میں ان کے کاروبار ہیں۔ انہوں نے ملکی مفادات کو ترجیح دینے کی بجائے ذاتیات کا تحفظ کیا سیاست میں رشوت خوری’ خرید و فروخت ‘ اداروں میں من پسند افراد کی تعیناتی غرضیکہ پورے انفراسٹرکچر کو یرغمال بنایا ہوا تھا آخر یہ تو ہونا ہی تھا۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کشمیر کونسل کے فنڈز کا ناجائز استعمال کرکے آزاد کشمیر میں ہونے والے انتخابات میں دھاندلی کرکے جماعت کو دو تہائی اکثریت دلوائی ہم نے صرف جمہوریت کی خاطر قبول کیا۔ معاشرے کی تعمیر و ترقی کے لئے تعلیم کا عام ہونا ضروری ہوتا ہے ہم نے اپنے دور حکومت پانچ یونیورسٹیاں’ تین میڈیکل کالج اور ایک میڈیکل یونیورسٹی کا اجراء کیا اس سے پہلے آزاد کشمیر کے طلباء و طالبات کو پاکستان بھر کے دور دراز علاقوں کی یونیورسٹیوں میں ایک کڑے مرحلے کے بعد داخلہ ملتا تھا آزاد کشمیر کی تاریخ میں پہلی دفعہ ایسا ہوا مرکزی شاہرائوں کی کشادگی کی گئی ہمارا دور اقتدار سنہری تھا جبکہ ہمارے آج کے حکمران نوکریاں دینے کی بجائے تمام محکمہ جات میں سے لوگوں کو فارغ کرکے بے روزگار کررہے ہیں یہ منطق سمجھ سے بالاتر ہے۔ انہوں نے میڈیا کا شکریہ ادا کیا جو مختصر نوٹس پر تشریف لائے۔