تازہ ترین
سانپ نے آدمی کو کاٹا اور پھر آدمی نے اپنی بیوی کو کاٹ لیا، لیکن زندہ کون بچا؟ ناقابل یقین واقعہ         صدی کا سب سے بڑا مقدمہ، تاریخ کے سب سے بڑے منشیات سمگلر ایل چیپو کو سخت ترین سزا سنادی گئی         28 سالہ دلہن نے 70 سالہ دولہے کو لوٹ لیا         امیر ترین ہسپانوی سپر ماڈل کی مفلسی، سڑک پر آگئی         محمد اقبال چوہدری کے تایا جان کی روح کے ایصال ثواب کے لئے قران خوانی اور ختم شریف میں معززین کی شرکت         شفقت علی رضا اور رضوان کاظمی کی پالسن کے اونر چوہدری امانت علی وڑائچ اور محمد بلال علی سے ملاقات         سپین ۔کشمیری حریت پسند مقبول احمد بٹ شہید کی 35ویں برسی کی تقریب         بہاماس میں ہیٹی سے تارکین وطن کو لے جانے والی کشتی الٹنے سے 28 مسافر ڈوب گئے         بحیرہ روم میں ہلاک ہونے والے پاکستانیوں کی تعداد میں اضافہ         لیبیا کے قریب بحرہ احمر میں کشتی الٹنے سے 90 تارکین ڈوب کر ہلاک ہوگئے         67 سالہ دولہے اور 24 سالہ دلہن کی جان کو خطرہ         پاکستان اب ای پاسپورٹ اشو کرے گا تیاریاں مکمل         اوسپتالیت میں بین المذاہب ہم آہنگی سیمینار ، پاکستانیوں کی جانب سے طاہر رفیع کی شرکت         چوہدری شوکت آف قرطبہ ریسٹورنٹ کا حافظ عبدالرزاق صادق کے اعزاز میں عشائیہ ، معززین کی شرکت         دوران پروازجہاز کے انجن میں آگ لگ گئی ، مسافر محفوظ رہے        
l_420197_105826_updates

مریم نواز 2017ء کی بااثر ترین خواتین میں شامل

عزم و ہمت کی بنیاد پر نام بنانے والی دنیا کی 11 بااثر خواتین کی فہرست میں مریم نواز بھی شامل ہوگئیں۔

امریکی اخبار نیویارک ٹائمز نے ایسی 11 خواتین کی فہرست جاری کی ہے ،جنہوں نے حکومت ، قانون ، معاشرے،فرسودہ رسم ورواج اور زیادیتوں کے خلاف آواز اٹھائی ۔

امریکی اخبار کے مطابق دنیا کی ان 11 بااثر خواتین نے اپنے الفاظ ، ارادوں اور عزائم سے دنیا کے منظر نامے میں اپنی شناخت بنائی ۔

نیویارک ٹائمز نے حال ہی میں پاکستان کے سیاسی میدان میں قدم رکھنے والی مریم نواز شریف کو بھی دنیا کی باثر خواتین کی فہرست میں شامل کیا ہے۔

والد نواز شریف کی نااہلی کے خلاف جدو جہد کرتی مریم نواز شریف نے مختصر ترین عرصے میں دنیا کی طاقتور ترین خاتون کے طور پر نمایاں مقام حاصل کیا۔

نیویارک ٹائمز کے مطابق مریم نواز شریف مختصر ترین عرصے میں بھی اپنی اثر انگیز جدوجہد سے سال کی با اثر خواتین میں شامل ہوگئیں ۔

خواتین کے جائز حقوق اور زیادتیوں کے لیے آواز اٹھانے والی، جیل کی سختیاں جھیلنے والی اور امید افزا لفظوں سے زندگی میں رنگ بھرنے والی ان خواتین میں سعودی عرب، انڈونیشیا، جرمنی، اٹلی، سوئیڈن، فرانس، برما، ترکی اور چین کی باہمت خواتین شامل ہیں۔