تازہ ترین
سپین۔تارکین وطن پاکستانی مقامی سیاسی پارٹیوں کا حصہ بنیں ، حافظ عبدالرزاق صادق         سپین۔گستاخانہ خاکوں کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ، ہزاروں افراد کی شرکت         گریگ فیسٹیول ’’ منجوئیک ‘‘ میں پاکستانی ثقافت کے رنگ ، پاکسانی شعرا نے اپنا کلام سنایا         سپین۔مسلم لیگ کا اجلاس احتجاجی ضرور تھا لیکن کسی کے خلاف نہیں ، عہدیداران         سپین۔مسیحیوں کو اپنا نمائندہ خودمنتخب کرنے کا حق دیا جائے ، راجو الیگزینڈر         میاں نواز شریف کے استقبال کے لئے سپین سے بھی قافلے پاکستان پہنچیں گے ، مسلم لیگ ن سپین         سپین۔ تصویری نمائش میں بے نظیر بھٹو شہید کی تصویر توجہ کا مرکز         سپین۔الیکٹرانک میڈیا نمائندگان کے پلیٹ فارم کے لئے ایگزیکٹو کمیٹی قائم         سپین۔سفیر پاکستان اور قونصل جنرل بارسلونا کی کمیونٹی سے ملاقات         سپین۔بارسلونا کرکٹ کلب کی یونیفارم کی رونمائی اور تقریب تقسیم انعامات ظہیر عباس کی شرکت         سپین۔کشمیر کی آواز سنو سیمینارمیں بیرسٹر سلطان محمود کی شرکت         جنرل سیکرٹری مسلم لیگ ن سپین راجو الیگزینڈر کی جانب سے بیگم کلثوم نواز کی صحت یابی کے لئے دعائیہ تقریب کا اہتمام         چین نے پاکستانیوں کیلئے ویزہ اجراء کو نہایت آسان کر دیا         انڈونیشیا میں کشتی ڈوبنے سے193افراد تاحال لاپتہ         موت سے بچ جانے والے مزید 522 تارکین وطن اٹلی پہنچ گئے، حکومت روکنے میں ناکام        
wheat-flor-atta-500x500

موت کے سوداگر سپین میں سر گرم عمل ، آٹے کی آڑ میں پلاسٹک کی فروخت

بارسلونا(پاک نیوز رپورٹ )سپین میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کو آٹے کی آڑ میں پلاسٹک فروخت کرنے والے موت کے سوداگر سر گرم عمل ہیں ، تفصیلات کے مطابق ہیرا آٹا اور اسی طرح کے دوسرے نام والے آٹے کے پیکٹ جو سپین کے مختلف شہروں میں فروخت کئے جا رہے ہیں اُن کو پلاسٹک سے بھر کر پیٹ کی بیماریوں کی شروعات کر دی گئی ہے ، اس آٹے کو آپ پانی میں دھونا شروع کریں تو اس کا پلاسٹک نظر آ جاتا ہے ، ہسپانوی حکومتی اداروں کو چاہیئے کہ ایسا زہر بیچنے والوں کو گرفتار کرکے قرار واقعی سزا دی جائے ، کیونکہ یہ عناصر چند یوروز کی خاطر بڑوں اور بچوں کو آٹے کی آڑ میں پلاسٹک بیچ رہے ہیں جس سے ہر دوسرا پاکستانی پیٹ کی بیماری میں مبتلا ہو رہا ہے ،سپین میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے معززین نے پاکستانیوں کی فلاح و بہبود کے لئے بنائی گئی  ایسوسی ایشنز اور فیڈریشنز  سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ  اس معاملے کو مقامی حکومت تک پہنچائیں ، مجرمانہ ذہنیت کے حامل افراد نے پیسہ کمانے کا جو نیا طریقہ ایجاد کیا ہے اس سے انہیں تو فائدہ ہوگا لیکن ان پیسوں کے عوض خریدا جانے والا آٹے کے نام کا زہر پیٹ میں انفیکشن پیدا کرکے پیچیدہ بیماریوں کا باعث بنے گا ، پاکستانی کمیونٹی کو خبر دار کیا جاتا ہے کہ وہ آٹا خریدیں تو دیکھ بھال کرکے یا دکاندار کی ضمانت پر خریدیں تاکہ آٹا خراب ہونے کی صورت میں اس نقصان اور جرم کی ذمہ داری کسی پر ڈالی جا سکے اور ایسے جرائم کا خاتمہ کرنے میں مقامی انتظامیہ کی مدد کی جا سکے ۔