تازہ ترین
سپین۔تارکین وطن پاکستانی مقامی سیاسی پارٹیوں کا حصہ بنیں ، حافظ عبدالرزاق صادق         سپین۔گستاخانہ خاکوں کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ، ہزاروں افراد کی شرکت         گریگ فیسٹیول ’’ منجوئیک ‘‘ میں پاکستانی ثقافت کے رنگ ، پاکسانی شعرا نے اپنا کلام سنایا         سپین۔مسلم لیگ کا اجلاس احتجاجی ضرور تھا لیکن کسی کے خلاف نہیں ، عہدیداران         سپین۔مسیحیوں کو اپنا نمائندہ خودمنتخب کرنے کا حق دیا جائے ، راجو الیگزینڈر         میاں نواز شریف کے استقبال کے لئے سپین سے بھی قافلے پاکستان پہنچیں گے ، مسلم لیگ ن سپین         سپین۔ تصویری نمائش میں بے نظیر بھٹو شہید کی تصویر توجہ کا مرکز         سپین۔الیکٹرانک میڈیا نمائندگان کے پلیٹ فارم کے لئے ایگزیکٹو کمیٹی قائم         سپین۔سفیر پاکستان اور قونصل جنرل بارسلونا کی کمیونٹی سے ملاقات         سپین۔بارسلونا کرکٹ کلب کی یونیفارم کی رونمائی اور تقریب تقسیم انعامات ظہیر عباس کی شرکت         سپین۔کشمیر کی آواز سنو سیمینارمیں بیرسٹر سلطان محمود کی شرکت         جنرل سیکرٹری مسلم لیگ ن سپین راجو الیگزینڈر کی جانب سے بیگم کلثوم نواز کی صحت یابی کے لئے دعائیہ تقریب کا اہتمام         چین نے پاکستانیوں کیلئے ویزہ اجراء کو نہایت آسان کر دیا         انڈونیشیا میں کشتی ڈوبنے سے193افراد تاحال لاپتہ         موت سے بچ جانے والے مزید 522 تارکین وطن اٹلی پہنچ گئے، حکومت روکنے میں ناکام        
l_431774_110450_updates

سن2017 میں 1465 خواتین کوزیادتی کا نشانہ بنایا گیا

پاکستان میں سال 2017ء کے دوران 1465خواتین کو زیادتی کا نشانہ بنایا ہے ۔

ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان کے اعداد وشمار کے مطابق1465 میں سے نصف سے زائد یعنی769 نو عمر بچیاں تھیں۔

اعداد و شمار کے مطابق سال 2017ء کے دوران گینگ ریپ کے 21 واقعات میں ملزمان متاثر فرد کی جان پہچان والے تھے، 5 کیسز میں قریبی رشتے دار ملوث پائے گئے۔

اعداد وشمار کے مطابق ایک واقعے میں استاد جبکہ2 واقعات میں پڑوسی ملوث نکلے، ایسے ہی 177 واقعات میں محلے دار ملزم تھے ۔

سال 2017ء میں دل دہلادینے والے گینگ ریپ واقعات کی تعداد 447 رہی جبکہ 118 مرد بھی اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنے۔

ہیومن رائٹس کمیشن کے اعداد و شمار کے مطابق 447 واقعات میں سے 343 گینگ ریپ کا مقدمہ درج ہوا ،عدالتوں میں ایسے صرف 169 مقدمات میں پیشرفت ہوئی ۔

ایچ آر سی پی کے ڈیٹا کے مطابق سال2017ء میں 530 کم عمر بچیوں کے ساتھ ریپ کے واقعات ہوئے، 250 مردوں کے ساتھ بھی ریپ کیا گیا۔

ایسے 699 واقعات کی ایف آئی آر درج ہوسکی جبکہ 11 مقدمات کی پولیس رپورٹ تک درج نہ ہو پائی، ریپ کے 558 مقدمات عدالتوں میں زیر سماعت رہے۔