تازہ ترین
کوٹلہ برادران جہد مسلسل کا نام اورفتح اُن کا مقدر ہے،ہمیشہ جیت اُن کا مقدر رہے گی ۔ظفر پہلوان سابق باکسر وکمانڈو پاک آرمی         سپین ۔ میاں نواز شریف کے خلاف بے بنیاد مقدمات بنائے گئے ہیں ، راجہ حاجی اسد حسین و دیگر         ملالہ کے کمرے میں کس کی تصویر لگی ہے؟         آج رات 12بجے تمام مسروقہ غیر استعمال شدہ فون بند کردئیے جائینگے، پی ٹی اے         سپین۔چوہدری عابد رضا اور چوہدری شبیر کے خلاف انتقامی کاروائیاں بند کی جائیں ،چوہدری امتیاز آکیہ         چوہدری برادران نے پنجاب میں ریکارڈ ترقیاتی کام کئے ، چوہدری امتیاز لوراں         برٹش ائیرویز کے بعد جرمنی کی ائیرلائن نے بھی پاکستان سے پروازیں شروع کرنے کی خواہش کا اظہار کر دیا         پنجاب میں بیرون ملک جانے کے خواہش مند شہریوں کیلئے کریکٹر سرٹیفیکیٹ کے حصول کا عمل مزید آسان کردیا گیا         قونصلیٹ آفس بارسلونا میں کرسمس اور قائد ڈے کے کیک کاٹنے کی تقریب         سماجی راہنما راجہ شعیب ستی کے اعزاز میں عشائیہ،معززین کی شرکت         سپین۔مسلم لیگ ن کے زیر اہتمام کیک کاٹنے کی تقریب         سپین۔پاک ویلنسیا ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام کرسمس اور یوم ولادت قائد اعظم کی تقریب         سپین۔تارکین وطن پاکستانی مقامی سیاسی پارٹیوں کا حصہ بنیں ، حافظ عبدالرزاق صادق         سپین۔گستاخانہ خاکوں کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ، ہزاروں افراد کی شرکت         گریگ فیسٹیول ’’ منجوئیک ‘‘ میں پاکستانی ثقافت کے رنگ ، پاکسانی شعرا نے اپنا کلام سنایا        
l_443438_084521_updates

ایران میں حجاب مخالف احتجاج،29خواتین گرفتار

ایران میں حجاب کی پابندی کیخلاف احتجاج کرنے پر 29 خواتین کو گرفتار کر لیا گیاہے، کریک ڈاؤن کے باوجود حجاب کیخلاف احتجاج کا سلسلہ بڑھتا چلا جارہا ہے ۔

حجاب کی پابندی کیخلاف ایرانی خواتین کا احتجاج سوشل میڈیا سے نکل کر تہران کے چوراہوں پر آگیا ہےاور دائرہ بڑھتا ہی چلا جارہا ہے ۔
میڈیا رپورٹس کے مطابق حجاب مخالف احتجاج کا آغاز 27دسمبر 2017ء کو اس وقت ہوا جب 31سالہ ودا مواحد نے تہران کے خیابان انقلاب کے چبوترے پر چڑھ کر اپنا اسکارف سر سے اتارکر ڈنڈی پر لہرایا تھا ،جس کے بعد خاتون کو گرفتار کیا گیا تھا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ودا مواحدی کی گرفتاری کے بعد حجاب کیخلاف احتجاج میں گرفتاریوں کا غصہ بھی شامل ہوگیا اور ایک کے ایک خاتون تہران کی سڑکوں پر احتجاجا اپنا حجاب سر سے اتار کر لہراتی رہیں ۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ اور اس کے بعد انہیں گرفتار بھی کیا جاتا رہا ، ایرانی حکام نے گرفتار خواتین پر عوامی بدنظمی پیدا کرنے کی دفعات عائد کی ہیں ،۔ جن کی ضمانت کے لیئے ایک کروڑ روپے سے زائد رقم مقرر کی گئی ہے ۔

ایرانی پراسیکیوٹر جنرل جعفر منتظری کا کہنا ہے کہ گرفتار خواتین نے بچکانہ طرز عمل اختیار کیا اور یہ کام ممکنہ طور پر بیرون ملک موجود عناصر کے اشارے پر کیا جارہا ہے ۔