تازہ ترین
گریگ فیسٹیول ’’ منجوئیک ‘‘ میں پاکستانی ثقافت کے رنگ ، پاکسانی شعرا نے اپنا کلام سنایا         سپین۔مسلم لیگ کا اجلاس احتجاجی ضرور تھا لیکن کسی کے خلاف نہیں ، عہدیداران         سپین۔مسیحیوں کو اپنا نمائندہ خودمنتخب کرنے کا حق دیا جائے ، راجو الیگزینڈر         میاں نواز شریف کے استقبال کے لئے سپین سے بھی قافلے پاکستان پہنچیں گے ، مسلم لیگ ن سپین         سپین۔ تصویری نمائش میں بے نظیر بھٹو شہید کی تصویر توجہ کا مرکز         سپین۔الیکٹرانک میڈیا نمائندگان کے پلیٹ فارم کے لئے ایگزیکٹو کمیٹی قائم         سپین۔سفیر پاکستان اور قونصل جنرل بارسلونا کی کمیونٹی سے ملاقات         سپین۔بارسلونا کرکٹ کلب کی یونیفارم کی رونمائی اور تقریب تقسیم انعامات ظہیر عباس کی شرکت         سپین۔کشمیر کی آواز سنو سیمینارمیں بیرسٹر سلطان محمود کی شرکت         جنرل سیکرٹری مسلم لیگ ن سپین راجو الیگزینڈر کی جانب سے بیگم کلثوم نواز کی صحت یابی کے لئے دعائیہ تقریب کا اہتمام         چین نے پاکستانیوں کیلئے ویزہ اجراء کو نہایت آسان کر دیا         انڈونیشیا میں کشتی ڈوبنے سے193افراد تاحال لاپتہ         موت سے بچ جانے والے مزید 522 تارکین وطن اٹلی پہنچ گئے، حکومت روکنے میں ناکام         برطانیہ کی یورپی یونین سے علیحدگی کا بل کامنز میں منظور، ووٹ نے عوام کی طاقت ثابت کردی، وزیراعظم         ان گنت طبی فوائد لیے چھوٹا سا بیج ’’تخم بالنگا‘‘        
l_443804_034022_updates

لیبیا میں حادثے کے شکار افراد کو بھجوانے والا گروہ گرفتار

ایف آئی اے نے لیبیا میں کشتی حادثے کے مرکزی ملزم کو گجرات سے ساتھی سمیت گرفتار کرلیا۔ ملزم کا بھائی لیبیا میں اور بیٹا اٹلی میں بیٹھ کر انسانی اسمگلنگ کا نیٹ ورک چلا رہے تھے ۔

دفتر خارجہ کے مطابق لیبیا میں حادثے کا شکار ہونے والی کشتی میں 32 پاکستانی تھے ، 13 کی لاشیں مل گئیں۔ چار پاکستانیوں کی شناخت اب تک نہیں ہوسکی، جبکہ میتوں کو واپس لانے کے لیے اقدامات کررہے ہیں ، جاں بحق شہریوں سے متعلق معلومات وزارت خارجہ کی ویب سائٹ پر موجود ہیں۔

ڈپٹی ڈائریکٹر ایف آئی اے گوجرانوالا کے مطابق ملزمان میں محبوب شاہ اور اس کا ساتھی مدثر شامل ہیں ۔ محبوب شاہ دربار بابا فقیر شاہ کا گدی نشین بھی ہے ۔

محبوب شاہ کا بھائی لیبیا اور بیٹا اٹلی میں مقیم ہے ۔ ملزم اپنے بھائی اور بیٹے کے ساتھ مل کر انسانی اسمگلنگ کا نیٹ ورک چلاتا ہے ۔ ملزم لوگوں کو پہلے لیبیا میں اپنے بھائی کاکے شاہ کے پاس بھیجتا تھا جو انہیں سمندر کے راستے اٹلی میں محبوب شاہ کے بیٹے سجاد شاہ کے پاس پہنچاتا تھا ۔