تازہ ترین
زبیر گل کے خلاف ہونے والی سازش تمام تارکین وطن کے خلاف سازش ہے ،لیگی عہدیداران         مسلم لیگ ن سپین کے صدر ایاز عباسی اور سرپرست اعلی حاجی اسد حسین کی وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی انوشہ رحمان سے ملاقات         پاکستانی کمیونٹی کے مسائل کا حل اؤلین ترجیح ہو گی ، خیام اکبرسفیر پاکستان میڈرڈ         مسلم لیگ ن سپین آج شام سات بجے کایئے چلی میں جشن منائے گی ، مٹھائی تقسیم کی تقریب بھی ہو گی         کشمیریوں پر ایک ماہ میں 13 لاکھ پیلٹ گنز فائر کیےگئے،کشمیر پولیس         چار روزہ ورلڈ موبائل کانگریس بارسلوناکا اختتام ، انوشہ رحمان کی شرکت         سوسائٹی فار کرائسٹ اور مسلم لیگ ن سپین کی سانحہ شاہدرہ پر مشترکہ پریس کانفرنس         پاکستانی سیاست کے یورپی ممالک میں مقیم پاکستانیوں پر اثرات ، پاک نیوز سروے رپورٹ         MWC 2018: the biggest news from Mobile World Congress in Barcelona         پاکستان پیپلز پارٹی برطانیہ میں تقرریوں کا سلسلہ جاری         بھارتی لیجنڈری اداکارہ سری دیوی انتقال کرگئیں         کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے لاہور قلندرز کو 9 وکٹوں سے ہرا دیا         ویسٹ انڈیز کا دورئہ پاکستان خطرات سے دوچار         سائرہ پیٹر کی پی لیک فیسٹیول میں شاندار پرفارمنس         اردوان نے اپنے بدترین دشمن سے ہاتھ ملا لیا        
l_443804_034022_updates

لیبیا میں حادثے کے شکار افراد کو بھجوانے والا گروہ گرفتار

ایف آئی اے نے لیبیا میں کشتی حادثے کے مرکزی ملزم کو گجرات سے ساتھی سمیت گرفتار کرلیا۔ ملزم کا بھائی لیبیا میں اور بیٹا اٹلی میں بیٹھ کر انسانی اسمگلنگ کا نیٹ ورک چلا رہے تھے ۔

دفتر خارجہ کے مطابق لیبیا میں حادثے کا شکار ہونے والی کشتی میں 32 پاکستانی تھے ، 13 کی لاشیں مل گئیں۔ چار پاکستانیوں کی شناخت اب تک نہیں ہوسکی، جبکہ میتوں کو واپس لانے کے لیے اقدامات کررہے ہیں ، جاں بحق شہریوں سے متعلق معلومات وزارت خارجہ کی ویب سائٹ پر موجود ہیں۔

ڈپٹی ڈائریکٹر ایف آئی اے گوجرانوالا کے مطابق ملزمان میں محبوب شاہ اور اس کا ساتھی مدثر شامل ہیں ۔ محبوب شاہ دربار بابا فقیر شاہ کا گدی نشین بھی ہے ۔

محبوب شاہ کا بھائی لیبیا اور بیٹا اٹلی میں مقیم ہے ۔ ملزم اپنے بھائی اور بیٹے کے ساتھ مل کر انسانی اسمگلنگ کا نیٹ ورک چلاتا ہے ۔ ملزم لوگوں کو پہلے لیبیا میں اپنے بھائی کاکے شاہ کے پاس بھیجتا تھا جو انہیں سمندر کے راستے اٹلی میں محبوب شاہ کے بیٹے سجاد شاہ کے پاس پہنچاتا تھا ۔