تازہ ترین
پاکستانی سٹیج اداکاروں کی پردے کے پیچھے کی کہانی دیکھیں اس ویڈیو میں         لگرونیو والی بال ٹورنامنٹ میں چوہدری عزیز امرہ اور سبط امرہ مہمان خصوصی تھے وہاں کی یادگار تصاویر         سپین ۔ جشن آزادی شوٹنگ والی بال چیلنج کپ گجر کلب نے جیت لیا         بارسلونا میں انڈیا کے آزادی کے دن کو یوم سیاہ کے طور پر منایا گیا ، البیلا ٹی وی کی رپورٹ         پاکستان مسلم لیگ ن سپین کے صدر چوہدری محمد افضال سے میڈیا کی ملاقات         سپین۔ تیسرا ایشیاءٹی ٹوئنٹی کرکٹ کپ پاکستان نے جیت لیا         چوہدری موسی الہی کو خوش آمدید کہتے ہوئے چوہدری عبدالغفار مرہانہ کے اشتہار کا عکس         چوہدری موسی الہی کو بارسلونا آمد پر خوش آمدید کہتے ہیں ، چوہدری عبدالغفار مرہانہ         ملک عمران اور مرزا بشارت مہمان خصوصی چوہدری عزیز امرہ کا استقبال کرتے ہوئے         ملک عمران کرکٹ کی خدمت کے ساتھ ساتھ شعبہ نقابت میں بھی کمال کرتے ہیں         سپین۔تیسرے ایشیاءٹی 20 کرکٹ کپ ٹرافی کی تقریب رونمائی، مہمان خصوصی چوہدری عزیز امرہ تھے         سپین ۔ تیسرے ایشیاءٹی 20 کرکٹ کپ ٹرافی کی تقریب رونمائی         چوہدری تنویر کوٹلہ کے اعزاز میں عشائیہ ، راجہ شعیب ستی ، نوید وڑائچ، راجہ سونی و دیگر کی شرکت         سنجرانی کے خلاف عدم اعتماد تحریک کی ناکامی اپوزیشن جماعتوں کی ناکامی ہے ، چوہدری نوید وڑائچ         برازیل کی جیل میں 2 گروپوں میں تصادم، 52 قیدی ہلاک        

عمران خان کے ایک اور دعوے کا بھانڈا پھوٹ گیا

چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کے ایک اور دعوےکا بھانڈا خیبرپختونخوا کے انرجی اینڈ ڈیولپمنٹ آرگنائزیشن کی دستاویز نے پھوڑ دیا ۔

دستاویزمیں انکشاف کیا گیا ہے کہ 356میں سے40چھوٹےپن بجلی گھروں پرکام ہی شروع نہیں ہوا، 114چھوٹے پن بجلی گھروں پرکام اب تک مکمل نہیں کیا گیا ،کوئی بجلی گھررسمی طور پر کمیونٹی کےحوالےنہیں کیاگیا۔

دستاویز کے مطابق بجلی کے بیشتر منصوبے 5 سے 50 کلو واٹ تک کے ہیں،تمام 356منصوبوں کی مجموعی پیداوار  35میگاواٹ ہوگی۔

دستاویزکے مطابق بیشترمنصوبے جغرافیائی سروے مکمل کیےبغیرشروع کیےگئے،ستمبر2014میں شروع کیے گئے 356  چھوٹے پن بجلی گھرمنصوبے 18 ماہ میں مکمل ہوناتھے۔

رپورٹ کے مطابق خیبرپختونخوامیں بجلی پیداوارکے 356منصوبےابھی تک مکمل نہ ہوسکے،جن میں 114 منی مائیکرو ہائیڈرل پراجیکٹ بھی شامل ہیں۔

دستاویز کے مطابق 2016ء کے سیلاب سے بجلی پیدا کرنے کے 9منصوبوں کو نقصان پہنچا ،جن میں 6کوہستان اور 3شانگلا میں واقع تھے جبکہ شانگلا میں چلتا ہوا بجلی گھر بھی سیلاب میں بہہ گیا تھا۔

ذرائع پیڈوکےمطابق ستمبر2014ء میں شروع کیےگئےمنصوبے18ماہ میں مکمل ہونے تھے، بیشتر منصوبے جغرافیائی سروے مکمل کیے بغیرشروع کیےگئے،کوئی بجلی گھررسمی طورپرکمیونٹی کےحوالےنہیں کیاگیامنصوبے کے تحت میٹر لگا کر صارفین سے ماہانہ بل وصول کئے جانے تھے ۔

حکام پیڈو کے مطابق بجلی کے202منصوبےمکمل کرکےکمیونٹی کےحوالےکیے،2روپےفی یونٹ کی بجلی فراہم کرناکسی طور ممکن نہیںتاہم 40چھوٹے پن بجلی گھروں پرکام شروع ہی نہ ہوسکا۔