تازہ ترین
سپین۔تارکین وطن پاکستانی مقامی سیاسی پارٹیوں کا حصہ بنیں ، حافظ عبدالرزاق صادق         سپین۔گستاخانہ خاکوں کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ، ہزاروں افراد کی شرکت         گریگ فیسٹیول ’’ منجوئیک ‘‘ میں پاکستانی ثقافت کے رنگ ، پاکسانی شعرا نے اپنا کلام سنایا         سپین۔مسلم لیگ کا اجلاس احتجاجی ضرور تھا لیکن کسی کے خلاف نہیں ، عہدیداران         سپین۔مسیحیوں کو اپنا نمائندہ خودمنتخب کرنے کا حق دیا جائے ، راجو الیگزینڈر         میاں نواز شریف کے استقبال کے لئے سپین سے بھی قافلے پاکستان پہنچیں گے ، مسلم لیگ ن سپین         سپین۔ تصویری نمائش میں بے نظیر بھٹو شہید کی تصویر توجہ کا مرکز         سپین۔الیکٹرانک میڈیا نمائندگان کے پلیٹ فارم کے لئے ایگزیکٹو کمیٹی قائم         سپین۔سفیر پاکستان اور قونصل جنرل بارسلونا کی کمیونٹی سے ملاقات         سپین۔بارسلونا کرکٹ کلب کی یونیفارم کی رونمائی اور تقریب تقسیم انعامات ظہیر عباس کی شرکت         سپین۔کشمیر کی آواز سنو سیمینارمیں بیرسٹر سلطان محمود کی شرکت         جنرل سیکرٹری مسلم لیگ ن سپین راجو الیگزینڈر کی جانب سے بیگم کلثوم نواز کی صحت یابی کے لئے دعائیہ تقریب کا اہتمام         چین نے پاکستانیوں کیلئے ویزہ اجراء کو نہایت آسان کر دیا         انڈونیشیا میں کشتی ڈوبنے سے193افراد تاحال لاپتہ         موت سے بچ جانے والے مزید 522 تارکین وطن اٹلی پہنچ گئے، حکومت روکنے میں ناکام        
l_455531_113442_updates

شہباز شریف کی ترقی، مسلم لیگ نواز پنجاب کا اگلا سربراہ کون ؟

وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے مزید عروج پر آتے ہی اب پاکستان مسلم لیگ نواز پنجاب کے سربراہ کی سیٹ خالی ہوگئی اور اس کا سربراہ کون ہوگا ،لیگی رہنما کا کہنا ہے کہ اگلے چیف کا فیصلہ پارٹی قیادت کرچکی ہے لیکن اس سیٹ پر تعیناتی کیلئے ایک ماہ سے زائد کا وقت لگے گا ۔

شہباز شریف کی ترقی کے بعد پاکستان مسلم لیگ نواز کے صدر کی ذمہ داریاں مریم نواز ،حمزہ شہباز ،خواجہ سعد رفیق یا کسی اور میں سے کون سنبھا لے گا ؟کئی برسوں سے اس مقام پر رہنے والے شہباز شر یف کے مزید ترقی پاتے ہی پنجاب کا یہ عہدہ خالی ہوجا ئے گا۔

سینئر لیگی رہنما پنجاب کے صدر سے متعلق اپنے لبوں کو سیئے ہوئے ہیں لیکن ان میں سے ایک کاکہنا ہے کہ مریم پارٹی میں اہم کردار ادا کریں گی کیونکہ اپنے والد نوازشریف کی 28 جولائی کے فیصلے میں نااہلی کے بعد سے ان کے شانہ بشانہ کامیاب مہم چلانے سے انہوں نے یہ مقام حاصل کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب صدر کی حیثیت سے شہباز شریف نے پارٹی میں مختلف طاقتور گروپوں کے درمیان توازن کو قائم رکھا ہے کیونکہ ان کی حکمت عملی سے سب ہی مطمئن رہے ہیں اور زیادہ شکایات بھی نہیں ہوئیں۔

انہوں نے کہاکہ اس میں اب کوئی شک باقی نہیں رہتا کہ جولائی انتخابات کیلئے پاکستان مسلم لیگ (ن)کی مہم خصوصی طور پر نوازشریف اور مریم چلائیں گی ۔

دوسری طرف شہباز شریف اور حمزہ ہوںگے تاہم شہباز شریف اور حمزہ دونوں نے اب تک عوامی جلسے سے خطاب نہیں کیا جبکہ ایک ہی وقت میں علیحدہ طور پر جلسوں میں بات کرتے رہے ہیں۔

مسلم لیگ (ن)کے رہنما کاکہنا ہے کہ مریم کو اگر پنجاب کا سربراہ بنادیا جاتا ہے تو وہ پارٹی امور سے متعلق تجربات لینے کے قابل ہوجائیں گی۔

دوسری طرف حمزہ کا پنجاب میں ہونے والے تمام ضمنی انتخابات میں غیر معمولی کردار رہا ہے ۔وہ پنجاب میں پارٹی امور میں سمجھداری کے ساتھ مصروف رہے ہیں۔

لیگی رہنما نے کہا کہ پارٹی میں ذوالفقار کھوسہ جیسا کوئی باعزم دستیاب نہیں ہے جوپنجاب کا صدر بن سکتا ہے اور ان کی تعیناتی کسی کیلئے ناراضگی کا باعث نہیں ہوگی ۔

دوسری بار کیلئے نوازشریف پاکستان مسلم لیگ نواز کے قائد بن گئے ہیں لیکن وہ پارٹی سربراہ نہیں جیسا کہ پارٹی آئین میں کہاگیاہے۔ انہوں نے سوچا کہ یہ منصب جب شہباز شر یف اس کے صدر بنے ہیں ،مشرف کے بنائے گئے قانون میں سابق وزیر اعظم کو اس عہدے کیلئے پابندی عائد کی گئی تھی ۔

یہ کہا جا رہا ہے کہ مسلم لیگ (ن)کی قیادت نے پنجاب کے اگلے سربراہ کیلئے فیصلہ کرلیا ہے لیکن اس تعیناتی کو پر کرنے کیلئے ایک ماہ سے زیادہ کا عرصہ لگے گا ،پنجاب چیپٹر کیلئے سربراہ کو اس وقت منتخب کیاجائے گا کہ جب شہباز شریف کو اس کا مستقل صدر منتخب کیاجائے گا ۔