تازہ ترین
سانپ نے آدمی کو کاٹا اور پھر آدمی نے اپنی بیوی کو کاٹ لیا، لیکن زندہ کون بچا؟ ناقابل یقین واقعہ         صدی کا سب سے بڑا مقدمہ، تاریخ کے سب سے بڑے منشیات سمگلر ایل چیپو کو سخت ترین سزا سنادی گئی         28 سالہ دلہن نے 70 سالہ دولہے کو لوٹ لیا         امیر ترین ہسپانوی سپر ماڈل کی مفلسی، سڑک پر آگئی         محمد اقبال چوہدری کے تایا جان کی روح کے ایصال ثواب کے لئے قران خوانی اور ختم شریف میں معززین کی شرکت         شفقت علی رضا اور رضوان کاظمی کی پالسن کے اونر چوہدری امانت علی وڑائچ اور محمد بلال علی سے ملاقات         سپین ۔کشمیری حریت پسند مقبول احمد بٹ شہید کی 35ویں برسی کی تقریب         بہاماس میں ہیٹی سے تارکین وطن کو لے جانے والی کشتی الٹنے سے 28 مسافر ڈوب گئے         بحیرہ روم میں ہلاک ہونے والے پاکستانیوں کی تعداد میں اضافہ         لیبیا کے قریب بحرہ احمر میں کشتی الٹنے سے 90 تارکین ڈوب کر ہلاک ہوگئے         67 سالہ دولہے اور 24 سالہ دلہن کی جان کو خطرہ         پاکستان اب ای پاسپورٹ اشو کرے گا تیاریاں مکمل         اوسپتالیت میں بین المذاہب ہم آہنگی سیمینار ، پاکستانیوں کی جانب سے طاہر رفیع کی شرکت         چوہدری شوکت آف قرطبہ ریسٹورنٹ کا حافظ عبدالرزاق صادق کے اعزاز میں عشائیہ ، معززین کی شرکت         دوران پروازجہاز کے انجن میں آگ لگ گئی ، مسافر محفوظ رہے        
606331_4427916_e4_akhbar

اقوام متحدہ اور یورپی یونین کی زیرنگرانی انسانی حقوق کمیشن کو مقبوضہ کشمیر بھیجا جائے، ویانا میں مظاہرہ

ویانا (پاک نیوز)5فروری یوم یکجہتی کشمیر کے سلسلہ میں کشمیری عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنے کے لئے پاکستان و کشمیر اور پوری دنیا میں جہاں جہاں پاکستانی اور کشمیری آباد ہیں یورپ سمیت کشمیری عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا جاتا ہے۔ اسی سلسلے میں آسٹریا کے دارلحکومت ویانا میں اقوام متحدہ کے دفتر یو این او کے سامنے پاکستانی کمیونٹی فورم آسٹریا کے صدر ندیم خان کی زیر قیادت اور پاکستانی کمیونٹی فورم کی زیر انتظام سہ پہر چار بجے سے لےکر شام چھ بجے تک ایک پُرامن احتجاجی مظاہرہ کا انعقاد کیا گیا۔ پُرامن احتجاجی مظاہرہ میں سخت سردی کے باوجود خواتین سمیت بچوں،بوڑھوں اور نوجوانوں نے آسٹریا بھر کے چھوٹے بڑے شہروں سے کثیر تعداد نے شرکت کی، مظاہرہ میں انڈین سکھ برادری نے بھی شرکت کرکے کشمیری قوم کے ساتھ اظہار ہمدردی کیا۔ پُرامن احتجاجی مظاہرے میں مظاہرین پاکستانی اور کشمیری پرچم لہراتے رہے اورمظاہرین نے کتبے اور بینر بھی اُٹھا رکھے تھے جن پر بھارت کے خلاف اور کشمیری عوام کے حق میں نعرے درج تھے اور پُرامن مظاہرین کشمیر بنے گا پاکستان اور کشمیر کو آزادی دو اور کشمیری شہیدوں کا خون ایک دن ضرور رنگ لائے گا کے نعرے لگاتے رہے۔ مختلف مقررین پروفیسر ملک شوکت مسرت اعوان، خواجہ منظور احمد، ڈاکٹر حمیرا جلال، بابر فہیم خان، حبیب الرحمان، جہانگیراحمد، خواجہ نسیم، ڈاکٹر اصغر،سید عبدالرحمان شاہ، گونتر ایڈوکیٹ نے یورپین یونین اور اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر نوٹس لیں اور کشمیر میں بھارت کی جانب سے نہتے شہریوں پر کیا جانے والا ظلم و ستم بند کرایا جائے اور کشمیریوں کو اُن کے انسانی حقوق دیئے جائیں اور غیر جانبدار صحافیوں کو کشمیر میں داخل ہونے کی اجازت دی جائے۔ اُنہوں نے یورپین یونین اور اقوام متحدہ کی زیر نگرانی انسانی حقوق کا ایک مشن غیر ملکی انٹر نیشنل میڈیا کے ساتھ کشمیر کا وزٹ کرنے کا مطالبہ کیا۔ مختلف مقررین نے جرمن ،انگلش اور اردو میں تقاریر کیں۔ پُرامن احتجاجی مظاہرہ کے موقع پر پولیس نے سیکورٹی کے سخت حفاظتی انتظامات کررکھے تھے اور پُرامن مظاہرہ کے اختتام پر اقوام متحدہ کے دفتر کے سامنے سیکورٹی آفیسر کو ایک یادداشت بھی پیش کی گی۔