تازہ ترین
طاہر رفیع اور اجمل رشید بٹ ہسپانوی الیکشن میں امیدوار ہوں گے         Pakistan vs Australia 2nd ODI Live | 24 March 2019         Pakistan vs Australia 2nd ODI Live | 24 March 2019 | Ptv Sports Live         Thousands of Catalan separatists march in Madrid         یوم پاکستان اور ڈاکٹر محمد اسد کے عنوان سے اسپین کے تاریخی شہر غرناطہ میں پہلے پروگرام کا انعقاد         میکسیکو:حادثے میں 25 تارکین وطن ہلاک         برطانیہ میں امیگریشن اب پبلک کیلئے تشویش کابڑا موضوع نہیں رہا، سٹڈی میں انکشاف         17 سالہ جوڈی کے قتل کے شبہ میں دوسرا شخص گرفتار         ٹیپو سلطان کون تھا؟ مورخین اور ماہرین کی رائے         میکسیکو نائٹ کلب پر فائرنگ ،15 ہلاک         دُبئی: پاکستانی ڈرائیور نے چوری کرنے پر بھارتی ملازم کو پکڑوا دیا         موٹرولا کے Razr فولڈ ایبل فون کے فیچرز سامنے آ گئے         شین واٹسن پاکستان آنے پر راضی ہو گئے         شارجہ میں گولڈ خریدنے سے پہلے یہ ویڈیو ضرور دیکھیں         دُنیا کا نیا عجوبہ        
Screenshot_3

دُبئی: پاکستانی ڈرائیور نے چوری کرنے پر بھارتی ملازم کو پکڑوا دیا

عدالت نے چار غیر مُلکی ملازمین کو اپنے لیبر کیمپ سے لاکھوں درہم مالیت کا قیمتی فرنیچر چُرانے کے الزام میں چھ ماہ قید اور ڈی پورٹ کیے جانے کی سزا سُنا دی ہے۔ استغاثہ کی جانب سے ایک بھارتی سیکیورٹی گارڈ اور اُس کے دو نیپالی اور ایک بنگلہ دیشی ساتھی ملازمین کے خلاف1500 بنکر بیڈز، 1500 میٹریسز، 1500 سمال وارڈ روبز، 172 کلاتھ ڈرائنگ ریکس، 134 سمال ڈائننگ ٹیبلز، 262 کُرسیاں اور دو ٹی وی سیٹ چوری کرنے کے الزامات عائد کیے گئے۔ملزمان نے یہ سب چوری کیا گیا سامان بیچ کر اُس کا منافع آپس میں تقسیم کیا تھا۔ استغاثہ کے مطابق ملزمان بڑی ہوشیاری سے وقتاً فوقتاً اپنی کمپنی کے گودام میں پڑا سامان بیچتے رہے۔ یہ سلسلہ مہینوں سے جاری تھا تاہم ایک روز کمپنی کا پاکستانی ڈرائیور اپنی رہائش گاہ پر واپس آ رہا تھا تو اُس نے دیکھا کہ ملزمان کمپنی کا سامان پِک اپ ٹرکوں میں لاد کر کہیں بھجوا رہے تھے۔

ڈرائیور کو اندازہ ہو گیا کہ یہ سب کمپنی کا مال ان ملزمان نے وقتاً فوقتاً چوری کر رکھا تھا جسے اب وہ بیچنے کا منصوبہ بنا رہے ہیں۔ ڈرائیور نے اس ساری واردات کی ویڈیو موبائل کیمرے پر بنا کر کمپنی کے مینجر کودکھا دی۔ مینجر نے چاروں ملزمان کو طلب کیا۔ پہلے توبھارتی ملازم اور اس کے دیگر ساتھیوں نے اپنی شرمناک حرکت کو تسلیم کرنے سے انکار کر دیا، تاہم جب معاملہ پولیس کے سپرد کیا گیا تو انہوں نے ساری بات اُگل دی۔ جس پر عدالت نے انہیں چھے چھے ماہ قید اور ڈی پورٹ کیے جانے کی سزا سُنا دی