تازہ ترین
یوم پاکستان مشاعرہ ، ایک شام فاخرہ انجم کے نام         پاک، اسپین اکنامک ڈپلومیسی، شفقت علی رضا         یوم پاکستان پروگرام کی کامیابی قونصل جنرل کی ان تھک محنت کا نتیجہ ہے ،امتیاز آکیہ         طاہر رفیع اور اجمل رشید بٹ ہسپانوی الیکشن میں امیدوار ہوں گے         Pakistan vs England T20 Live | 05 May 2019         Pakistan vs Australia 2nd ODI Live | 24 March 2019 | Ptv Sports Live         Thousands of Catalan separatists march in Madrid         یوم پاکستان اور ڈاکٹر محمد اسد کے عنوان سے اسپین کے تاریخی شہر غرناطہ میں پہلے پروگرام کا انعقاد         میکسیکو:حادثے میں 25 تارکین وطن ہلاک         برطانیہ میں امیگریشن اب پبلک کیلئے تشویش کابڑا موضوع نہیں رہا، سٹڈی میں انکشاف         17 سالہ جوڈی کے قتل کے شبہ میں دوسرا شخص گرفتار         ٹیپو سلطان کون تھا؟ مورخین اور ماہرین کی رائے         میکسیکو نائٹ کلب پر فائرنگ ،15 ہلاک         دُبئی: پاکستانی ڈرائیور نے چوری کرنے پر بھارتی ملازم کو پکڑوا دیا         موٹرولا کے Razr فولڈ ایبل فون کے فیچرز سامنے آ گئے        
616498_1036854_e4_akhbar

برطانیہ میں امیگریشن اب پبلک کیلئے تشویش کابڑا موضوع نہیں رہا، سٹڈی میں انکشاف

ایک حالیہ سٹڈی میں انکشاف ہوا ہے کہ برطانیہ میں امیگریشن اب پبلک کیلئے تشویش کا بڑا موضوع نہیں رہا، اس کے برعکس قوم کیلئے صحت اب پہلی ترجیح بن گئی ہے۔قومی شماریاتی دفتر ( او این ایس) کی جانب سے گزشتہ روز شائع ہوئے اعدادوشمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ قوم اس ماہ کے اختتام پر ای یو سے علیحدگی کی تیاری کر رہی ہے۔ عام آبادی بھی خوش ہے کہ ان کی ترجیحات تبدیل ہو گئی ہیں۔ او این ایس رپورٹ میں 2019میں برطانیہ اور بقیہ یورپ میں لوگوں کی بہتری کا تقابلی جائزہ لیا گیا تھا۔ سال 2016کے موسم بہار میں برطانوی عوام کی سب سے بڑی تشویش امیگریشن تھی جس کے بعد صحت ، سوشل سیکورٹی اور دہشتگردی پر تشویش پائی گئی تھی۔ 2018کے موسم بہار میں صحت اور سوشل سیکورٹی بین الاقوامی تشویش کا ٹاپ موضوع بن گئے اور ہائوسنگ ، افراط زر اور ضروریات زندگی کے بڑھتے ہوئے اخراجات ثانوی حیثیت حاصل کر لی۔ ماہرین اقتصادیات نے اس یقین کا اظہار کیا ہے کہ تشویش کا موضوع تبدیل ہونا اس بات کا اشارہ ہے کہ روائتی اور مقامی

 مسائل دوبارہ توجہ کا مرکز ہوں گے کیونکہ برطانیہ یورپین یونین سے علیحدگی کی تیاری کر رہا ہے اور بریگزٹ پر مذاکرات جاری ہیں۔ انسٹی ٹیوٹ آف اکنامک افیئرز ( آئی ای اے ) پر لائف سٹائل اکنامکس کے سربراہ پروفیسر کرسٹوفر سنوڈن نے کہا کہ لوگوں کو یقین ہے کہ برطانیہ اپنی سرحدوں کا کنٹرول خود اپنے ہاتھوں میں لے رہا ہے جس کے نتیجے میں لوگوں کی تشویش امیگریشن سے ہٹ کر صحت اور این ایچ ایس، سوشل سیکورٹی اور اخراجات جیسے روائتی مسائل کی جانب مرکوز ہو رہی ہے۔