تازہ ترین
حاجی اسد حسین کی برطانیہ میں سہیل وڑائچ ، طاہر چوہدری اور حمزہ باسط بٹ سے ملاقات         کاتالونیا میں آزادی کی تحریک پھر زور پکڑ گئی ہے         کشمیر اور خالصتان کی آزادی کے لئے ریفرنڈم ٹونٹی ٹونٹی کا اعلان، شفقت علی رضا         علامہ اقبال ؒ کے یوم پیدائش پراوسپتالیت کے اُردو سکول میں شاندار تقریب         بارسلونا: آل پارٹیز کشمیر کانفرنس، کشمیری و پاکستانی کمیونٹی کی شرکت         پاکستانی کمیونٹی کو ترقی کی منازل طے کرنے کے لئے راجہ ضیا صدیق کا خوبصورت مشورہ         وزیر اعظم پاکستان عمران خان کی دبنگ تقریر پر چوہدری ایاز مٹھانہ چک کے تاثرات         چوہدری افضال وڑائچ کے والد کی وفات پر پاکستانی کمیونٹی کا اظہار افسوس اور دعائے مغفرت         سابق وزیر خزانہ رانا محمد افضل کی وفات پر مسلم لیگ ن سپین کا اظہار افسوس         انٹرنیشنل امن کانفرنس سپین ،مولانا عبدالخبیر آزاد کی شرکت         سپین میں امراض جگر کے اسپیشلسٹ پہلے پاکستانی ڈاکٹر عرفان مجید راجہ سے بات چیت، پاک نیوز رپورٹ         کاتالان کرکٹ لیگ فائنل کے مہمان خصوصی چوہدری عزیز امرہ ونر ٹرافی دیتے ہوئے         کاتالان کرکٹ لیگ کی چیمپیئن پاک آئی کیئر نے اپنی جیت کشمیری بھائیوں کے نام کر دی         قونصلیٹ آفس بارسلونا میں کشمیر کے حق میں احتجاج مختلف شعبہ ہائے زندگی کے معززین کی شرکت         آل پاکستان فیملی ایسوسی ایشنز، اظہار ایسوسی ایشن، ایسوسی ایشن پیس فار پیس کے زیر اہتمام ہر سال کی طرح اس سال بھی ہسپیتالت میں پاکستانی بچوں میں تعلیم کو فروغ دینے کے سلسلے میں پروگرام Back to school کا انعقاد کیا        

اوور تھرو کے پانچ کی بجائے چھ رنز دینا غلطی تھی، امپائر دھرما سینا کا اعتراف

ورلڈ کپ فائنل میں امپائرنگ کے فرائض سرانجام دینے والے کمار دھرما سینا نے اعتراف کیا ہے کہ آخری اوورمیں ان سے غلطی ہوئی اور انھوںنے اوور تھرو پر انگلینڈ کو پانچ کی بجائے چھ رنز دے دیے۔کرکٹ ورلڈکپ 2019 کے اختتامی میچ کے دوران میدان میں امپائر کے فرائض انجام دینے والے دھرما سینا آخری اوور میں انگلینڈ کو اوور تھرو سے 6 رنز دینے کی غلطی تسلیم کر لی ہے۔

کرکٹ مطابق اوور تھرو سے ہونے والی باؤنڈری کے اضافی رنز دینے کے لیے یہ دیکھا جاتا ہے کہ تھرو ہوتے وقت (یعنی فیلڈر کے ہاتھ سے بال نکلتے وقت) بلے باز کتنے رنز کی کراسنگ مکمل کرچکے تھے۔اختتامی میچ کے آخری اوور میں نیوزی لینڈ کے کھلاڑی نے جب گیند پھینکی تو انگلینڈ کے بلے بازوں نے ایک ہی رن مکمل کیا تھا اور دوسرے رن کی کراسنگ نہ ہوئی تھی۔آئی سی سی قوانین کے مطابق انگلینڈ کو 6 نہیں بلکہ 5 رنز ملنے چاہیے تھے اورگیند بازی کا سامنا بین سٹوک کی بجائے راشد کو کرنا چاہیے تھا۔سری لنکا سے تعلق رکھنے والے فیلڈ ایمپائر دھرما سینا نے کہا کہ میرے پاس ویڈیو دوبارہ دیکھنے کی سہولت موجود نہیں تھی جس سے معلوم ہوتا کہ دوسرے رنز کے کراسنگ مکمل ہوئی یا نہیں، لہذا میں نے ساتھی امپائر کی مشاورت سے فیصلہ دیا۔انہوں نے کہا کہ میں وائرلیس پر ساتھی امپائر سے بات کی تھی اور یہ گفتگو میدان سے باہر بیٹھے دیگر امپائرز بھی سن رہے تھے۔ دھرما سینا نے کہا کہ انہوں نے فیصلہ دیگر ساتھیوں کی مشاورت سے دیا تھا۔اس موقع پر انگلینڈ کو جیت کے لیے نو رنز درکار تھے جبکہ اس کے پاس صرف چار گیندیں ہی تھیں۔ اسٹوکس نے ٹرینٹ بولٹ کی گیند کو باؤنڈری کے پار بھیجنے کی کوشش کی مگر مارٹن گپٹل نے گیند کو روک لیا۔بین اسٹوکس نے بھاگ کر دو رنز لینے کی کوشش کی اور گپٹل نے اسٹوکس کو براہ راست ہٹ پر رن آؤٹ کرنے کے لیے تھرو کی۔ اسٹوکس نے رن آؤٹ سے بچنے کے لیے چھلانگ لگادی اور گیند ان کے بلے سے لگ کے باؤنڈری سے باہر چلی گئی۔آن فیلڈ امپائر نے انگلینڈ کو چھ رنز دے دیے جس کے بعد دو آؤٹ ہونے کے باوجود بھی میچ ٹائی ہو گیا۔ دھرما سینا کی غلطی سے انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے درمیان ہونے والا فائنل بغیر کسی نتیجے کے ختم کے ہوگیا تھا اور فیصلہ سپر اوور میں کرنا پڑا۔