تازہ ترین
سپین: کشمیری رہنما مقبول بٹ شہید کی 36ویں برسی پر تقریب         آرمی کمانڈو اور سابق باکسر ظفر پہلوان کی ساتھیوں سمیت کشمیر ریلی میں شرکت         قونصل جنرل بارسلونا کے ساتھ مل کر یوم پاکستان پروگرام کامیاب بنائیں گے ، میاں محمد اظہر و راجو الیگزینڈر         جاوید ڈار کو حمزہ جاوید ڈار کی تعلیمی کامیابی پر چوہدری نوید وڑائچ کی مبارک باد         کشمیر ریلی بارسلونا میں چوہدری نزیر احمد نواں کی بھر پور شرکت         کشمیر ریلی میں ایاز مٹھانہ ، راجہ بابر ناصر اور قدیر احمد خان کی شرکت         چوہدری امتیاز آکیہ کی کشمیر ریلی بارسلونا میں بھر پور شرکت         کشمیر ریلی رامبلہ راوال میں چوہدری گلریز بوگا کی شرکت         مسلم لیگ ن سپین قافلے کی صورت کشمیر ریلی میں شریک         ندائے کشمیر ایسوسی ایشن سپین کے زیر اہتمام کشمیر ریلی کا انعقاد         حاجی اسد حسین کی برطانیہ میں سہیل وڑائچ ، طاہر چوہدری اور حمزہ باسط بٹ سے ملاقات         کاتالونیا میں آزادی کی تحریک پھر زور پکڑ گئی ہے         کشمیر اور خالصتان کی آزادی کے لئے ریفرنڈم ٹونٹی ٹونٹی کا اعلان، شفقت علی رضا         علامہ اقبال ؒ کے یوم پیدائش پراوسپتالیت کے اُردو سکول میں شاندار تقریب         بارسلونا: آل پارٹیز کشمیر کانفرنس، کشمیری و پاکستانی کمیونٹی کی شرکت        
mian-nawaz-sharif-pak-pattan-land-case-jail

پاک پتن اراضی کیس ، اصل کہانی منظر عام پر آگئی ، نواز شریف کے گرد گھیرا تنگ

کوٹ لکھپت جیل میں سابق وزیر اعظم نوازشریف سے پاکپتن اراضی کیس میں پوچھ گچھ کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ہے۔

محکمہ اینٹی کرپشن کی چار رکنی ٹیم نےپاک پتن اراضی کیس میں تحقیقات کےلیے کوٹ لکھپت جیل  میں سابق وزیر اعظم نواز شریف سے ملاقات کی اور انہیں سوالنامہ پیش کیا ۔

تفتیشی ٹیم میں ٹیم ڈائیریکٹر شفاقت اللہ ، اسسٹنٹ ڈائریکٹر انویسٹی گیشن غضنفر طفیل، اسسٹنٹ ڈائریکٹر لیگل راشد مقبول اور انسپکٹر ہیڈ کوارٹر زاہد علی شامل تھے۔

ذرائع کے مطابق نواز شریف سے محکمہ اینٹی کرپشن کی تفتیش 40 منٹ تک جاری رہی ،جیل کے ایک علیحدہ کمرے میں 4 رکنی ٹیم نے نواز شریف سے سوالات کئے۔

ذرائع پاکپتن اراضی کیس میں ریکارڈ نواز شریف کے سامنے رکھ کرکہا گیا ’آپ ملزم ہیں‘۔

نوازشریف نے کہا کہ میری وزارت اعلیٰ کے دور کا بہت پرانا کیس ہے،کچھ یاد نہیں،میرے پاس کوئی تفصیل نہیں کیس کی کاپیاں مجھے دیدیں،دیکھ لوں گا۔

اینٹی کرپشن ٹیم نے کہا کہ سیکریٹری ٹوسی ایم نے24گھنٹےمیں الاٹمنٹ کی سمری مانگی اورفیصلہ کردیا۔

نوازشریف نے کہا کہ محکمےنےکیس بناکربھیجا،سیکریٹری نےعجلت میں کام کیاہوگا،وہی بتاسکتا ہے۔

اینٹی کرپشن ٹیم نے کہا کہ محکمےنےالاٹمنٹ کےخلاف سمری بھیجی لیکن سیکرٹری نے12گھنٹےمیں فیصلہ کردیا۔

تفتیشی ٹیم نے کہا کہ وزیراعلیٰ کا اس وقت کا سیکریٹری کہتا ہے نواز شریف کے کہنے پر اراضی الاٹ کی۔

نواز شریف نے جواب دیا کہ اس بارے میں کوئی جواب نہیں دے سکتا، میری قانونی ٹیم جواب دے گی جس کے بعد تفتیشی ٹیم واپس روانہ ہو گئی۔