تازہ ترین
بارسلونا: آل پارٹیز کشمیر کانفرنس، کشمیری و پاکستانی کمیونٹی کی شرکت         پاکستانی کمیونٹی کو ترقی کی منازل طے کرنے کے لئے راجہ ضیا صدیق کا خوبصورت مشورہ         وزیر اعظم پاکستان عمران خان کی دبنگ تقریر پر چوہدری ایاز مٹھانہ چک کے تاثرات         چوہدری افضال وڑائچ کے والد کی وفات پر پاکستانی کمیونٹی کا اظہار افسوس اور دعائے مغفرت         سابق وزیر خزانہ رانا محمد افضل کی وفات پر مسلم لیگ ن سپین کا اظہار افسوس         انٹرنیشنل امن کانفرنس سپین ،مولانا عبدالخبیر آزاد کی شرکت         سپین میں امراض جگر کے اسپیشلسٹ پہلے پاکستانی ڈاکٹر عرفان مجید راجہ سے بات چیت، پاک نیوز رپورٹ         کاتالان کرکٹ لیگ فائنل کے مہمان خصوصی چوہدری عزیز امرہ ونر ٹرافی دیتے ہوئے         کاتالان کرکٹ لیگ کی چیمپیئن پاک آئی کیئر نے اپنی جیت کشمیری بھائیوں کے نام کر دی         قونصلیٹ آفس بارسلونا میں کشمیر کے حق میں احتجاج مختلف شعبہ ہائے زندگی کے معززین کی شرکت         آل پاکستان فیملی ایسوسی ایشنز، اظہار ایسوسی ایشن، ایسوسی ایشن پیس فار پیس کے زیر اہتمام ہر سال کی طرح اس سال بھی ہسپیتالت میں پاکستانی بچوں میں تعلیم کو فروغ دینے کے سلسلے میں پروگرام Back to school کا انعقاد کیا         قونصل جنرل بارسلونا عمران علی چوہدری کی کاتالونیا کے نیشنل ڈے کی تقریبات میں شرکت         قونصل جنرل بارسلونا عمران علی چوہدری کی کاتالونیا کے صدر کوائم تورا سے ملاقات         قونصل جنرل بارسلونا عمران علی چوہدری کی صوبائی فارن منسٹر الفریڈ بوش ای پاسکوال سے ملاقات         ظہیر جنجوعہ نے نئی سفارتی ذمہ داریاں سنبھال لیں        

بارسلونا: آل پارٹیز کشمیر کانفرنس، کشمیری و پاکستانی کمیونٹی کی شرکت

تحریک کشمیر اسپین کے پلیٹ فارم سے آل پارٹیز کشمیر کانفرنس منعقد ہوئی جس میں سیاسی، سماجی اور فلاحی تنظیموں کے نمائندوں نے شرکت کی۔

کانفرنس میں شریک معززین نے ’کشمیر توجہ چاہتا ہے‘ اور کس طرح دوسرے ممالک میں رہ کر کشمیریوں کی مدد کی جا سکتی ہے، جیسے موضوعات زیرِ بحث آئے۔

شرکا سے تجاویز بھی لی گئیں کہ کس طرح ہم کشمیر کاز کو یورپ بھر میں اجاگر کر سکتے ہیں اور جن لوگوں کو اس مسئلہ کا علم نہیں انہیں کس طرح مسئلہ کشمیر سے متعارف کرایا جا سکتا ہے۔

شرکاء نے تجاویز دیتے ہوئے کہا کہ ابھی ہمیں مسئلہ کشمیر پر کام کرنے کی بہت ضرورت ہے، ہمیں چاہیے کہ اسپین کے مقامی اخبارات میں مسئلہ کشمیر کے حوالے سے اشتہار دیں اور کوشش کریں کہ ہمارے صحافی مقامی صحافیوں کے ساتھ مل کر اس مسئلہ پر آرٹیکلز لکھیں اور ایڈیٹر کی ڈاک میں مسئلہ کشمیر کا خط لکھا جائے اور اسپین کے مقامی اخبارات میں ہسپانوی زبان میں بتایا جائے کہ اصل مسئلہ کیا ہے اور کس طرح بھارتی فوج مقبوضہ کشمیر میں ظلم ڈھا رہی ہے۔

شرکاء نے کہا کہ اب ہمیں زیادہ طاقت سے ضرب لگانے کی ضرورت ہے، ہمیں اکتوبر میں ہونے والے بڑے احتجاج میں زیادہ سے زیادہ پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی کو اکٹھا کرنا ہوگا تاکہ احتجاج دیکھ کر لوگ پوچھنے پر مجبور ہو جائیں کہ آخر مسئلہ کشمیر ہے کیا؟ ہمیں چاہیے کہ ہم ہسپانوی زبان سیکھیں تاکہ مقامی کمیونٹی سے ان کی زبان میں مسئلہ کشمیر کے حوالے سے بات کی جا سکے اور ہمارے نوجوان اور بچے اپنے اسکولوں، کالجز اور یونیورسٹیز میں اپنے کلاس فیلوز کو مسئلہ کشمیر کے بارے میں بتائیں تاکہ وہ سب اپنے اپنے پلیٹ فارم سے اس مسئلے پر آواز بلند کر سکیں۔

شرکاء نے کہا کہ جب بھی کشمیر کے حوالے سے کوئی احتجاج ہو تو ہمیں اپنے ساتھ مقامی کمیونٹی کو بھی لانا چاہیے، اس کے لیے اُنہیں قائل کیا جائے کہ وہ ہمارے اس احتجاج میں آئیں، اسپین کی قومی و صوبائی پارلیمنٹ اور ہسپانوی پریس کلب کے سامنے مظاہرے کئے جائیں تاکہ ان لوگوں کی نظر اس معاملے کی طرف ہو، تمام مساجد میں جس دن احتجاج ہو اس میں شامل ہونے کے لیے مساجد میں اعلانات کئے جائیں۔

اسپین کی جتنی مزدور یونیز ہیں ان سے بات کی جائے تاکہ وہ اپنے اپنے پلیٹ فارم سے اس مسئلے پر بات چیت کریں، ان مزدور یونیز میں یو جی ٹی اور سی سی او قابل ذکر ہیں، کسی جگہ بڑی اسکرین لگا کر یا مقامی ہسپانوی لائبریریز میں ویڈیوز کلپس دکھائے جائیں، جن میں کشمیر میں ہونے والے مظالم کی بات ہو، قونصل خانوں اور سفارت خانوں میں کشمیریوں پر ہونے والے مظالم کی تصویری نمائشیں لگائی جائیں۔

کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے معززین کا کہنا تھا کہ مقامی کمیونٹی کو مسئلہ کشمیر بتانے کے لئے کلچرل میلوں کا اہتمام کیا جائے جہاں کشمیر کے سب رنگ دکھائے جائیں، اسٹوڈنٹس، وکلاء، مقامی بزنس کمیونٹی، ڈاکٹرز اور انسانیت کے لئے کام کرنے والی ایسوسی ایشنز سے ملاقاتیں کی جائیں۔

شرکاء نے مودی سرکار اور بھارتی فوج کی کشمیر میں جاری بربریت کے خلاف سخت نعرے بازی کی۔

اس موقع پر شہدائے کشمیر کے درجات کی بلندی کے لیے دعا بھی کی گئی۔